ارشد جمال نے سپریم کورٹ میں آج داخل کیا کیویئٹ-ارشد جمال


ارشد جمال نے سپریم کورٹ میں آج داخل کیا کیویئٹ


مؤناتھ بھنجن۔ مؤ نگر پالیکا پریشد کے سابق چیئرمین ارشد جمال نے الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ بینچ میں ان کی جانب سے داخل جن ہت یاچکا نمبر9740/2017(ارشد جمال و دیگر بنام اتر پردیش حکومت) اور رِٹ پٹیشن نمبر 8293/2017(محمد مصطفی اور دیگر بنام بھارت سرکار) اور دیگر درخواستوں پر تاریخ 12-05-2017 کو دیئے گئے فیصلے کے بعدآج بتاریخ 19-05-2017 کو انہوں نے احتیاطی طور پر سپریم کورٹ میں اپناکیویئٹ داخل کر دیا ہے۔معلوم ہو کہ گوشت بندی کے بعد الہ آباد ہائی کورٹ کی لکھنؤ بینچ میں نئی دکانوں کے لائسنس جاری کرنے اور ان کی تجدید کرنے کے لئے 26 لوگوں نے رِٹ یاچکائیں داخل کی تھیں۔ اسی کے ساتھ مسٹر ارشد جمال نے مؤ نگر پالیکا کے ذریعہ تعمیر کرائے گئے سلاٹر ہاؤس کو شروع کرنے، نئی گوشت کی دکانوں کے لائسنس جاری کرنے اور انکی تجدید کرنے کے لئے جن ہت یاچکا داخل کی تھی جس پر ہائی کورٹ نے فیصلہ سنایا تھا۔مسٹر جمال نے بتایا کہ انہوں نے یہ احتیاطی قدم اس لیے اٹھایا ہے کہ اگر اتر پردیش حکومت الہ آباد ہائی کورٹ کی  لکھنؤبینچ کے ذریعہ دیئے گئے اس فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ جاتی ہے تو عدالت عظمیٰ ہمارا موقف سننے کے بعد کوئی بہترفیصلہ کریگی۔