مرکزی حکومت کے ذریعہ 2017-18 کے لئے اقلیتی کمیونٹی سے متعلق اسکالرشپ اسکیموں کا اعلان - ارشد جمال


مرکزی حکومت کے ذریعہ 2017-18 کے لئے اقلیتی کمیونٹی سے متعلق اسکالرشپ اسکیموں کا اعلان 

پری_ میٹرک اسکیم کے تحت درجہ1/سے درجہ 5/تک کے طلبہ و طالبات کو اسٹڈی کے لئے 1000 روپئے، درجہ 6/سے درجہ10/تک کے طلبہ و طالبات کو اسٹڈی کے لئے 5000 روپئے کی تقسیم کا التزام ہے۔ایسے ہونہار طلبہ و طالبات جن کے والدین کی سالانہ انکم کی حد1 /لاکھ روپئے تک ہو وہ درخواست گزارنے کی آخری تاریخ 31 /ستمبر، 2017 تک اپنی درخواستیں آن لائن گزاریں۔
اسی طرح پوسٹ _میٹرک اسکیم کے تحت درجہ 11 /سے درجہ 12 / تک کے طلبہ و طالبات کو اسٹڈی کے لئے 9000 روپئے نیز انڈر گریجوئٹ طلبہ و طالبات کو اسٹڈی کے لئے 6000 روپئے کی تقسیم کا التزام ہے۔ایسے ہونہار طلبہ و طالبات جن کے والدین کی سالانہ انکم کی حد2 /لاکھ روپئے تک ہو وہ درخواست گزارنے کی آخری تاریخ 31 /اکتوبر، 2017 تک اپنی درخواستیں آن لائن گزاریں۔
اسی طرح میرٹ کم مینس اسکیم کے تحت پروفیشنل اور ٹیکنیکل کورسیس کے لئے اقلیتوں سے تعلق رکھنے والے غریب ہونہار طلبہ و طالبات کو اسٹڈی کے لئے 25000 سالانہ دیئے جانے کا التزام ہے۔اس کے تحت ایسے ہونہار طلبہ و طالبات جن کے والدین کی سالانہ انکم کی حد2.5 /لاکھ روپئے سے تجاوز نہ کرتی ہو وہ اپنی درخواستیں درخواست گزارنے کی آخری تاریخ 31 /اکتوبر، 2017 تکنیشنل اسکالر شپ پورٹل کی ویب سائٹ www.scholarship.gov.in پر آن لائن گزاریں۔اس کے بعد اس کاپرنٹ نکال کر متعلق تعلیمی اداروں میں جمع کریں۔

یہ باتیں جانکاری دیتے ہوئے سابق چیئر مین نیز مائنارٹی اسٹوڈنٹ فورم کے ڈائریکٹر ارشد جمال نے بتائی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اقلیتی طبقات سے تعلق رکھنے والے طلباء و طالبات کے لئے مرکزی حکومت کی جانب سے یہ موقع فراہم کیا جا رہا ہے نیز اس اسکیم کے نفاذ سے تعلیم کے حصول کو یقینی بنانے میں بچوں کے والدین کی حوصلہ افزائی کیاجانا مقصود ہے۔مسٹر جمال نے سرپرستوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ اسکول جانے والے بچوں کو اسکول بھیجیں اور اس اسکیم کے تحت فائدہ حاصل کرتے ہوئے تعلیم کے لئے اپنے اوپر پڑنے والے مالی بوجھ کو بھی کم کریں۔مسٹر جمال نے جانکاری دیتے ہوئے مزید بتایا کہ اس درخواست کے ساتھ آدھار کارڈ،دستخط شدہ فوٹو، آخری سالہ مارکشیٹ، رہائشی ثبوت، انکم ثبوت کا خود اعلانیہ، آئی ایف ایس سی نمبر کے ساتھ بینک پاس بک کی فوٹو کاپی منسلک ہونا ضروری ہے۔مسٹر جمال نے کہا کہ جو طلبہ و طالبات ذہین ہیں لیکن انکی تعلیم پر ہونے والے اخراجات کو برداشت کرنے میں ان کے والدین قاصر ہیں ان کے لئے یہ موقع غنیمت ہے۔ارشد جمال نے ایسے تمام طلبہ و طالبات کو ترغیب دیتے ہوئے کہا کہ انہیں متعینہ تاریخوں میں متعلقہ ویب سائٹ پر اپنی درخواستیں آن لائن ضرورگزار نا چاہیئے۔ تمام طالب علموں کے لئے آن لائن درخواست گزارنا لازم ہے۔انہوں نے یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ اس ضمن میں ہر ممکن تعاون کے لئے امیدوار ان کے کیمپ دفتر' مسکن' سے بھی رابطہ کر سکتے ہیں۔